قندیل بلوچ قتل کیس: مفتی عبدالقوی کے ناقابلِ ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری

Download PDF


ملتان کے ایک جوڈیشل مجسٹریٹ نے جمعرات کے روز قندیل بلوچ قتل کیس میں مفتی عبدالقوی کے ناقابلِ ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کردیے ہیں.

جوڈیشل مجسٹریٹ محمد پرویز خان وارنٹ گرفتاری جاری کرتے ہوئے کیس کی سست رفتاری پربھی سرزنش کی، تفتیشی افسران کے مطابق مفتی عبدالقوی ان کے ساتھ کسی قسم کا تعاون نہیں کررہے. البتہ وارنٹ گرفتاری جاری ہونے کے کچھ دیر بعد ہی مفتی عبدالقوی نے قبل از گرفتاری ضمانت کی درخواست جمع کروادی ہے. ڈسٹرکٹ اورسیشن کورٹ کے جج چوہدری امیراحمد خان ایک لاکھ روپے کے مچلکوں کے عوض مفتی عبدالقوی کو قتل کیس میں ضمانت فراہم کردی ہے.

مفتی عبدالقوی کی مقتول قندیل بلوچ کے ساتھ تصاویراورویڈیوز بنوانے پربھرپورمذمت کی گئی تھی اورانہیں اس قتل کی تفتیش میں بھی شامل کیا گیا تھا. اس واقعہ کے بعد مفتی عبدالقوی کی روئیتِ حلال کمیٹی کی رکنیت بھی معطل کردی گئی تھی. مفتی عبدالقوی نے ہمیشہ قندیل بلوچ کے قتل میں کسی بھی طرح سے ملوث ہونے کا انکارکیا ہے لیکن انہوں نے یہ بھی کہا تھا کہ اگرپولیس ان سے تفتیش کرنا چاہتی ہے تووہ تعاون کریں گے.

قندیل بلوچ نے فیس بک پراپ لوڈ کی گئی اپنی ویڈیوزسے مشہوری حاصل کی تھی، ان ویڈیوز میں ناچ گانا اورسیاستدانوں کوشادی کی پیشکش جیسی حرکتیں کی گئی تھیں اورایسی ہی ایک ویڈیومفتی عبدالقوی کے لیے باعثِ شرمندگی ثابت ہوئی. قندیل بلوچ کوپچھلے سال جولائی میں ان کے اپنے ہی بھائی نے غیرت کے نام پرگلا گھونٹ کرقتل کردیا تھا.

اپنا تبصرہ بھیجیں