قندیل بلوچ قتل میں استعمال ہونے والی کارمفتی عبدالقوی کے کزن کی تھی

Download PDF

car-used-qandeel-murder-abdul-qavi-cousin
ملتان: پولیس کا کہنا ہے کہ سوشل میڈیا سٹارقندیل بلوچ کے قتل میں جو گاڑی استعمال کی گئی تھی وہ مفتی عبدالقوی کے ایک کزن کی ملکیت ہے.

پولیس کے مطابق یہ معلومات مفتی عبدالقوی کے 13 دن کے جسمانی ریمانڈ‌ کے دوران حاصل کی گئی ہے. اس تفتیش کے دوران مفتی عبدالقوی نے اس بات کا اعتراف بھی کیا کہ جس گھرمیں قندیل بلوچ کا قتل ہوا اس کا مالک محمد نواز بھی ان کا قریبی دوست اوررشتہ دارہے جبکہ گاڑی کا ڈرائیورعبدالباسط بھی ان کا قریبی دوست ہے. مبینہ طورپرعبدالباسط اس گاڑی میں مرکزی ملزمان وسیم اورحق نواز کو ڈیرہ غازی خان سے ملتان لے کرآیا تھا اورقتل کے بعد واپس بھی چھوڑکرآیا تھا.

پولیس کا کہنا ہے کہ محمد نواز نے قندیل بلوچ کے والدین کوایک بھاری رقم کے عوض معاملہ رفع دفع کرنے کے لیے مجبورکیا. کینٹ پولیس کے سپرانٹنڈنٹ ڈاکڑفہد نے کہا کہ مفتی عبدالقوی نے دورانِ تفتیش جن لوگوں کا نام لیا ہے ان کو بھی سوال جواب کے لیے بلایا جائے گا، انہوں نے مزید کہا کہ پولیس نے مفتی عبدالقوی کے جسمانی ریمانڈ میں مزید 14 دنوں کی توسیع کی درخواست دی ہے.

مفتی عبدالقوی کو پہلے ڈسٹرکٹ جیل ملتان لے جایا گیا جہاں قتل کے مرکزی ملزمان وسیم اورحق نواز بھی موجود تھے لیکن بعد میں انہیں خطرات کے پیشہ نظرسنٹرل جیل میں منتقل کردیا گیا.

اپنا تبصرہ بھیجیں