ai-could-end-humanity-elon-musk

انسانیت کا خدا حافظ، ایلون مسک کا پھرسے انتباہ

ai-could-end-humanity-elon-musk
ٹیسلا کمپنی کے مالک اورمعروف کاروبای شخصیت ایلون مسک نے ایک بارپھرخبردارکیا ہے کہ اگرمصنوعی ذہانت کا بغیرکسی پابندی کے فروغ جاری رہا تویہ انسانیت کے لیے انتہائی خطرناک ثابت ہوگا. ان کا یہ بیان ایک ویڈیوکے منظرعام پرآنے کے بعد سامنے آیا ہے جس میں ایک روبوٹ بازیگری کے کرتب دکھا رہا ہے.

ٹویٹ صارف ایلکس میدینہ جو کہ واکس میڈیا (Vox) کے ڈیزائینربھی ہیں نے باسٹن ڈائنیمکس نامی ایک کمپنی کے بنائے ہوئے روبوٹ ایٹلس (Atlas) کی ویڈیوشائع کی جس میں وہ الٹی قلابازی لگا رہا ہے. اس ویڈیو کے ٹائٹل میں انہوں لکھا “ہم مرگئے”. اس کے جواب میں ایلون مسک نے لکھا “یہ توکچھ بھی نہیں ہے. صرف چند سالوں میں ہی یہ روبوٹ اتنی تیزی سے حرکت کرے گا کہ اسے دیکھنے کے لیے سٹروب لائٹ چاہیے ہوگی. انسانیت کوخدا حافظ کہ دیجیئے.”


بعد میں اپنی بات کی وضاحت کرتے ہوئے ایلون مسک کا کہنا تھا “ہمیں روبوٹکس پربھی ایسے ہی کنٹرول کرنا ہوگا جیسے ہم کھانے، ادویات، جہازوں اورگاڑیوں کوکرتے ہیں. جن معاملات میں‌ عوام کوخطرہ لاحق ہے ان کی نگرانی بھی عوام کے ذریعے ہی ہونی چاہیے. اگر ایف اے اے (FAA) کوختم کردیا جائے تواس سے فضائی سفرمحفوظ نہیں ہوجائےگا. ایسے نظام نافذ کرنے کی مناسب وجوہات موجود ہیں.

سائنس کی دنیا میں ایلون مسک وہ واحد آدمی نہیں ہیں جوروبوٹس کوانسانیت کے لیے خطرہ گردانتے ہیں بلکہ اوربہت سے ذہین اورقابل سائنسدانوں کے خیالات بھی یہی ہیں. مشہورِ زمانہ ماہرِ طبیعیات سٹیفن ہاکنگ نے متعدد بارخبردارکیا ہے کہ مصنوعی ذہانت کی بلا روک ٹوک ترقی انسانیت کے خاتمہ کا باعث بن سکتی ہے.

اپنا تبصرہ بھیجیں