پوٹن کے زیرِ انتطام روس مسلسل سونا ذخیرہ کرنے میں مصروف

Download PDF

russia-increase-gold-resevers-putin
ماسکو: روس کا سنٹرل بنک صدر ولادِمیرپوٹن کے دیئے گئے حدف کے مطابق سونے کے ذخائرمیں مسلسل اضافہ کررہا ہے تاکہ روس کو علاقائی سیاست کے خطرات سے تحفظ فراہم کیا جا سکے.

اس سال نومبرتک روس کے پاس 1801 ٹن سونا موجود تھا جوکہ کل ذخائرکا 17.3 فیصد بنتا ہے. امریکہ، جرمنی، اٹلی، فرانس اورچین کے بعد روس دنیا کا چھٹا سب سے زیادہ سونے کے ذخائررکھنے والا ملک ہے. روسی ریگولیٹر کے فرسٹ ڈپٹی چیئرمین سرگے شویٹسو نے پچھلے ہفتہ ماسکو میں منعقدہ ایک کانفرنس میں کہا “صدرپوٹن کے احکامات کی روشنی میں بنک آف روس ایک ایسے پروگرام پرعمل پیرا ہے جس کا مقصد سونے کے ذخائرمیں اضافہ کرنا ہے”.

Gold.org پوٹن کے صدربننے کے بعد سے اب تک روس کے سونے کے ذخائرمیں 500 فیصد اضافہ ہوا ہے. پوٹن کی صدارت کے وقت روس کے پاس 343 ٹن سونا تھا جوکہ اب بڑھ کر 1801 ٹن ہوگیا ہے. سونے کی خریداری سے ملک علاقائی سیاست کے خطرات سے محفوظ رہتا ہے. 2014ء میں ایکریمیا کے ریفرنڈم کے بعد روس نے اپنے سونے کے ذخائرمیں 75 فیصد اضافہ کیا تھا.

اپنا تبصرہ بھیجیں