ہماری پالیسی پاکستان کوتکلیف کا احساس دلاناہے، بھارتی آرمی چیف

indian-army-chief-bipin-rawat
نئی دہلی: بھارتی آرمی چیف نے کہا ہے کہ پاکستان کوتکلیف کا احساس دلاتے رہنا بھارت کی پالیسی ہے.

بھارتی آرمی چیف جنرل بپن راوت نے نئی دہلی میں سالانہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ چین طاقتورملک ہے اوربھارتی سرحدوں پردباؤبڑھا رہا ہے لیکن بھارت بھی کمزورنہیں. سرحد پرچین سے خطرات کا سامنا ہے لیکن بھارتی فوج کسی بھی چینی جارحیت کا مقابلہ کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے اوروقت آ گیا ہے کہ وہ اپنی توجہ شمالی سرحد پرمرکوز ہے.

بھارتی آرمی چیف نے امریکہ کی پاکستان کودھمکیوں سے متعلق سوال کے جواب میں کہا کہ اس وقت ہم نے دیکھو اورانتظارکرو والی پالیسی اپنا رکھی ہے، پاکستان دہشت گردوں کوٹشو پیپرکے طورپراستعمال کرکے پھینک دیتا ہے لیکن بھارتی فوج نے ہمیشہ اس بات کویقینی بنایا کہ پاکستان کوبھی تکلیف کا احساس دلایا جاتا رہے. جنرل بپن راوت نے مزید کہا کہ جوہری، کیمیائی، حیاتیاتی اورتابکار ہتھیاروں کےاستعمال کی دھمکی اب حقیقت کا روپ دھارچکی ہے، آئندہ جنگ جیتنے کے لیے فوج کوجدید ہتھیاروں سے لیس کرنا ہوگا.

بھارتی آرمی چیف کا کہنا تھا کہ اس سال مقبوضہ کشمیرکے شمالی علاقوں میں آپریشن پرزیادہ توجہ دی جائے گی، 2017ء میں بھارتی فوج نے جنوبی کشمیرمیں زیادہ آپریشن کیے اوراس سال شمالی کشمیرکے علاقوں بارہ مولا، پٹن، ہنڈواوہ، کپواڑہ، سوپور، لولاب اوربانڈی پورا میں زیادہ فوجی آپریشن کیے جائیں گے.

اپنا تبصرہ بھیجیں