2048ء میں مسلمانوں کو یورپ پر کنٹرول حاصل ہوجائے گا

Muslims-Europe
ماضی قریب کی بلغارین خاتون بابا ونگا کی پیشن گوئیاں بھی حیرت انگیز ہیں غیر ملکی خبر رساں اداروں کی رپورٹس کے مطابق بابا وانگا نامی یہ خاتون 31 جنوری 1911ء‌کو بلغاریہ کے شہر وننجیلا میں‌پیدا ہوئی تھیں. اس بچی کی پیدائش پر کسی کو اس کے بچنے کی امید نہیں تھی. وانگا بچپن سے انتہائی ذہین تھی انھیں بچپن سے ہی روحانی علاج سے بھی دلچسپی تھی. بابا وانگا نوجوان ہی تھیں کہ ایک حادثے نے انہیں نابینا کردیا. ان کا کہنا تھا کہ کسی طوفان نے اسے اُٹھا کر دور پھینک دیااور اس کی آنکھیں مٹی سے بھر گئیں.اس کے بعد ان کی بینائی ہرطرح کے علاج اور کوشش کے باوجود ختم ہوگئی.
بابا وانگا کا انتقال 1996ء میں ہوا لیکن اس سے پہلے ہی وہ 2001ء میں ورلڈ ٹریڈ سنٹر پر حملے اور 2004ء میں سونامی ، ایک سیاہ فام امریکی شہری کے امریکی صدر بننے اور 2010ء میں عرب دنیا میں ابھرنے والی انقلابی تحریکوں کے سلسلے “عرب بہار” کی پیشین گوئی کرچکی تھیں. بابا وانگا کے مطابق 2016ء میں براعظم یورپ کے ملکوں کو مسلمان عسکریت پسندوں کے حملوں کا سامنا کرنا پڑے گا جن کے نتیجے میں یورپ کو بھاری جانی اور مالی نقصان اٹھانا پڑے گا.
بابا وانگا کی ساری باتیں اس کے پرستاروں نے تحریر کی تھیں وہ جو کچھ اس سے سنتے اسے تحریر کرلیتے. بابا وانگا دعویٰ کرتی تھیں کہ اس کو کسی ناقابل فہم ذریعے سے لوگوں کی باتیں معلوم ہوجاتی ہیں. بابا وانگا نے سوویت یونین ٹوٹنے، چرنوبل کے حادثے، سٹالن کی تاریخ وفات اور روسی آبدوز کرسک کی تباہی کی بھی پیشگوئیاں کیں جو بالکل درست ثابت ہوئیں. 1989ء‌میں بابا وانگا نے کہا تھا کہ امریکی لوگ انتہائی خوف میں مبتلا ہوں گیں جب ان پر دو آہنی پرندے حملہ کریں گے اور ہر طرف دہشت کا راج ہوگا. کہا جاتا ہے کہ یہ پیشگوئی نائن الیون کے بارے میں کی گئی تھی. جرمن نشریاتی ادارے کے مطابق بابا وانگا کی پیش گوئیاں ہیں کہ 2018ء میں چین دنیا کی سب سے بڑی سپر پاور بن جائے گا. 2023ء زمین کے مدار میں ہلکی سی تبدیلی آئے گی. 2028ء مٰن انسان توانائی کا ایک نیا ذریعہ تلاش کرلے گا. اناج کی کمی ختم ہوجائے گی. سیارے زہرہ کی جانب ایک انسانی خلائی مشن بھیجا جائے گا. 2033ء میں قطبین پر جمی ہوئی برف پگھل جائے گی اور سمندروں میں پانی کی سطح بلند ہوجائے گی. 2043ء میں مسلمانوں کو براعظم یورپ پر کنٹرول حاصل ہوجائے گا. یورپ کے زیادہ تر حصے خلافت میں آجائیں گے جبکہ اس کا مرکز روم ہوگا. 2046ء انسان اپنی مرضی کے مطابق انسانی اعضاء بنا سکے گا. اعضاء‌کی تبدیلی امراض کے علاج کا ایک اہم ذریعہ بن جائے گا. 2066ء میں ایک مسجد پر حملہ ہونے کے بعد امریکا غیرمعمولی ہتھیار استعمال کرے گا جس سے درجہ حرارت اچانک گر جائے گا. سنہ 2100ء میں‌مصنوعی سورج زمین کے تاریک حصوں‌کو روشنی دے گا.

شئیرکرکے اپنے دوستوں تک پہنچائیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں