justice_ijaz_ahsan-residence-under-fire

سپریم کورٹ کے جسٹس اعجازالاحسن کے گھرپردوبارفائرنگ

justice_ijaz_ahsan-residence-under-fire
لاہور: سپریم کے کورٹ کے جج جسٹس اعجازالاحسن کی لاہورمیں رہائشگاہ پراتوارکے روزدوبارفائرنگ کی گئی. فائرنگ کا پہلا واقع 4:30 بجے پیش آیا جبکہ دوسری بار صبح 9:00 بجے فائرنگ کی گئی.

اس واقع کے بعد چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثارجسٹس اعجازالاحسن کی رہاش گاہ پرپہنچ گئے اوروہاں آئی جی پنجاب عارف نوازخان کوبھی طلب کرلیا گیا. سپریم کورٹ کے ایک اہلکارکے مطابق جسٹس ثاقب نثاربذاتِ خود اس صورتحال کی نگرانی کررہے ہیں.

معاملے کی تحقیقات کے لیے ایک فرانسک ٹیم جسٹس اعجازالاحسن کے گھرپہنچ چکی ہے جبکہ فائرن کی نوعیت کا پتہ چلانے کے لیے ایک بلسٹک ماہرین کوبھی بلایا گیا ہے. پولیس اہلکاراس بات کی تحقیقات کررہے ہیں کہ آیا جسٹس اعجازالاحسن کی رہاش گاہ کوبراہ راست نشانہ بنایا گیا یا صرف ہوائی فائرنگ ہی کی گئی.

وزیرِاعلیٰ‌ پنجاب میاں شہبازشریف نے اس واقع کا نوٹس لیتے ہوئے تحقیقات کا حکم دے دیا ہے جبکہ پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے اپنے ٹویٹرپیغام میں اس واقع کی شدید مذمت کی ہے.

جسٹس اعجازالاحسن نوازشریف کے خلاف احتساب عدالت میں‌ کرپش مقدمات کی نگرانی بھی کررہے ہیں. جسٹس اعجازاور سپریم کورٹ کے اورججز اس وقت صوبائی دارلحکومت میں موجود ہیں اوریہاں مختلف مقدمات کی سماعت کررہے ہیں.

اپنا تبصرہ بھیجیں