روس نے دنیا کے پہلے تیرنے والے جوہری پاورپلانٹ کی رونمائی کردی

floating-nuclear-power-plant
مرمانسک: روس نے ہفتہ کے روز دنیا کے سب سے پہلے تیرنے والے جوہری پاورپلانٹ کی رونمائی کردی ہے. اس پاورپلانٹ کی رونمائی روس کے شمالی شہرمرمانسک میں‌ کی گئی جہاں اس پاورپلانٹ میں جوہری فیول بھرا جائے گا اورپھریہ پاورپلانٹ مشرقی سائبریا کے لئے روانہ ہوجائے گا.

اکاڈیمک لومونوسوو نامی اس پاورپلانٹ کی تعمیرسینٹ پیٹرزبرگ میں کی گئی ہے اوریہ جمعرات کے روز مرمانسک میں پہنچا جہاں اسے بندرگاہ میں لنگراندازکروا کرمیڈیا کے سامنے پیش کیا گیا.

اس پاورپلانٹ کی تعمیرروس کی قومی جوہری پاورفرم روساٹم نے کی ہے، اس بحری جہاز پر35 میگاواٹ کے دو جوہری ری ایکٹرنصب کیے گئے ہیں. اس بحری جہازکا وزن تقریباً 21000 ٹن ہے اوراسے 2019ء میں روس کے سب سے شمال مغربی علاقہ چکوٹکہ میں قائم پیوک بندرگاہ میں پہنچایا جائے گا.

اس جوہری پاورپلانٹ سے تقریباً دولاکھ لوگوں کے لئے بجلی پیدا کی جاسکتی ہے اوراس کا بنیادی مقصد دوردراز علاقوں میں موجود تیل نکالنے والی مشینری کوبجلی فراہم کرنا ہے. وٹالی ٹرٹنونے اس جوہری پاورپلانٹ کی تمعیرکے انچارج تھے اوران کا کہنا ہے “اس طرح کے پاورپلانٹ دوردراز علاقوں میں بجلی کی فراہمی کویقینی بنائیں گے جس سے ترقی اورپیدوارمیں مدد ملے گے”.

ان کا کہنا تھا کہ تیرنے والے ری ایکٹرز کی وجہ سے ماحول میں سالانہ 50000 ٹن کم کاربن ڈائی آکسائڈ گیس خارج ہوگی.

شئیرکرکے اپنے دوستوں تک پہنچائیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں