Mullah-Fazalullah

ڈرون حملے میں ملا فضل اﷲ کی ہلاکت کی تصدیق

Mullah-Fazalullah
کابل،اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک؍نیٹ نیوز)افغان حکومت اور کالعدم تحریک طالبان پاکستان نے ملا فضل اﷲ کی ہلاکت کی تصدیق کردی۔برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق افغان وزارت دفاع نے کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے سربراہ ملا فضل اﷲ کی ہلاکت کی تصدیق کر دی ہے ۔وزارتِ دفاع کے ترجمان محمد ردمنیش نے بی بی سی کو بتایا کہ ملا فضل اﷲ 13 جون کو کنّڑ میں ہونے والے امریکی ڈرون حملے میں مارا گیا۔کالعدم تحریک طالبان کے ترجمان خالد خراسانی نے ایک بیان میں کہا کہ کنٹر میں ملا فضل اﷲ افطار پارٹی کے بعد اپنی گاڑی میں سوارہوا تو ڈرون حملہ ہوگیا جس میں وہ اپنے چار اہم کمانڈروں سمیت مارا گیا۔بی بی سی نے پاکستانی حکام کے حوالے سے بتایا کہ ملا فضل اﷲ نے 13 جون کو افغان صوبہ کنّڑ کے ضلع مروارہ میں ایک افطار میں شرکت کی جس کے بعد رات 10 بج کر 45 منٹ پر جب وہ اپنی گاڑی میں بیٹھا تو اس پر ڈرون حملہ ہوا۔ حملے میں 5 افراد ہلاک ہوئے جن کی سوختہ لاشوں کو اسی رات سپرد خاک کر دیا گیا ۔ذرائع کے مطابق فضل اﷲ کے ساتھ مولوی عمر، عمران، ابو بکر اور سجاد مارے گئے ۔ واضح رہے ملا فضل اﷲ سانحہ اے پی ایس کامرکزی ملزم اورملا لہ یوسف زئی پر حملوں میں بھی ملوث تھا، وہ سوات آپریشن کے دوران افغانستان فرار ہوگیا تھا۔ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے حالیہ دورہ کابل میں بھی اس کیخلاف کارروائی کامطالبہ کیا گیا تھا۔ ذرائع کے مطابق آرمی چیف ملا فضل اﷲ کے خلاف کارروائی کے حوالے سے امریکی اورافغان حکام سے رابطے میں تھے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں