تیز انٹرنیٹ آپ کی نیند میں خلل ڈال سکتا ہے

انٹرنیٹ کی رفتار تیز ہونا ہر ایک کی خواہش ہوتی ہے مگر اس کا ایک بہت بڑا نقصان سامنے آیا ہے جو دنگ کردینے والا ہے۔

درحقیقت جن لوگوں کے گھروں میں تیز انٹرنیٹ ہوتا ہے، وہ نیند کی کمی کا زیادہ شکار ہوتے ہیں۔

یہ دعویٰ اٹلی میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آیا۔

Bocconi یونیورسٹی کی تحقیق میں بتایا گیا کہ تیز براڈ بینڈ اور فائبر آپٹک کیبلز اب عام ہوتے جارہے ہیں اور اس ٹیکنالوجی کے ساتھ لوگوں کی نیند بھی اڑتی جارہی ہے۔

تحقیق میں بتایا گیا کہ جن لوگوں کے گھر میں براڈبینڈ انٹرنیٹ ہوتا ہے وہ اوسطاً ان افراد کے مقابلے میں ہر رات 25 منٹ کم سوتے ہیں جن تک براڈ بینڈ کی رسائی نہیں ہوتی۔

تحقیق کے مطابق براڈبینڈ انٹرنیٹ تک رسائی لوگوں کی نیند میں کمی کا باعث بن کر ان کے اندر تھکاوٹ بڑھاتا ہے۔

محققین کے خیال میں اس کی وجہ یہ ہے کہ جب انٹرنیٹ بہتر ہو تو لوگ آن لائن وقت زیادہ گزارنے لگتے ہیں اور رات گئے تک سوشل میڈیا، ویڈیو گیمز یا ویڈیوز وغیرہ میں مصروف رہتے ہیں۔

درحقیقت ڈیوائسز کو استعمال کرنے کا اشتیاق لوگوں کو بستر سے دور رکھتا ہے، چاہے انہیں صبح جلد اسکول یا دفتر ہی کیوں نہ جانا ہو۔

محققین نے کہا کہ صبح کا سخت شیڈول اور رات کو برقی ڈیوائسز کے استعمال کرنے کی عادت کے نتیجے میں وہ 7 گھنٹے کی نیند سے محروم ہونے کا خطرہ بڑھتا ہے اور انہیں دن بھر کی مصروفیات کے بعد آرام نہیں ملتا۔

تحقیق میں یہ بات سامنے آئی کہ 13 سے 30 سال کی عمر کے افراد انٹرنیٹ زیادہ استعمال کرتے ہیں، اس کے مقابلے میں 31 سے 59 سال کی عمر کے افراد میں بھی یہ رجحان بڑھ رہا ہے تاہم وہ عام طور پر انٹرنیٹ براﺅزنگ کرتے ہوئے گزارتے ہیں۔

اس تحقیق کے نتائج طبی جریدے جرنل آف اکنامک بی ہیوئیر اینڈ آرگنائزیشن میں شائع ہوئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں