امریکا صرف اپنے دوستوں کو امداد دے گا، ڈونلڈ ٹرمپ

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ امریکا صرف اپنے اتحادی ممالک کو امداد دے گا۔

اقوام متحدہ کے سالانہ جنرل اسمبلی کے اجلاس میں عالمی رہنماؤں سے خطاب کرتے ہوئے ڈونلڈ ٹرمپ نے تیل پیدا کرنے والےممالک کی تنظیم اوپیک، چین کے تجارتی پالیسیوں اور عالمی عدالت انصاف پر برس پڑے جس کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ امریکا کبھی قبول نہیں کرے گا۔

امریکی خبر رساں ادارے اے پی کی رپورٹ کے مطابق ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنی تقریر میں کہا کہ ’ہم جانچیں گے کہ کیا کام کر رہا ہے اور کیا نہیں، وہ ممالک جو ہماری امداد لے رہی ہیں کیا ان کے دل میں بھی ہمارے مفاد ہیں کہ نہیں‘۔

ان کا کہنا تھا کہ ’ہم آگے بڑھتے ہوئے صرف انہیں امداد دیں گے جو ہماری عزت کرتے ہیں اور ہمارے دوست ہیں‘۔

اس کے علاوہ امریکی صدر نے تیل پیدا کرنے والےممالک کی تنظیم اوپیک کی ارکان پر الزام لگایا کہ ’جب میں نے تیل کی قیمتیں کم کرنے کا کہا تو انہوں نے دنیا کو لوٹا‘۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے اقوام متحدہ کو بتایا کہ امریکا اپنا کم قیمت تیل، کوئلہ اور قدرتی گیس بر آمد کرنے کے لیے تیار ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ اوپیک اور اوپیک کے رکن ممالک باقی دنیا کو لوٹ رہے ہیں، جو مجھے نہیں پسند اور کسی کو بھی پسند نہیں ہونا چاہیے‘۔

اس کے علاوہ ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے خطاب میں ایران اور واشنگٹن کے تجارتی شراکت داروں پر دباؤ بڑھایا۔

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنی ٹیم کی کارکردگی کو سراہتے ہوئے کہا کہ ہماری ٹیم نے اس ملک کی تاریخ میں سب سے زیادہ کام کیا ہے جس پر جنرل اسمبلی میں غیر معمولی زور دار قہقہے دیکھے گئے۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے ان قہقہوں کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ ’مجھے اس رد عمل کی امید نہیں تھی، لیکن کوئی بات نہیں‘۔

اپنا تبصرہ بھیجیں