وزیراعظم سے آرمی چیف، ڈی جی آئی ایس آئی کی ملاقات

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان سے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ اور ڈی جی آئی ایس آئی لیفٹیننٹ جنرل نوید مختار نے ملاقات کی ہے جس میں ملکی اور خطے کی سکیورٹی صورتحال پرتبادلہ خیال کیا گیا۔

ذرائع کے مطابق آرمی چیف نے وزیر اعظم کو اپنے حالیہ دورہ چین اوردہشت گردی کیخلاف آپریشنز کے حوالے سے بریفنگ دی۔ملاقات میں نیشنل ایکشن پلان کا جائزہ لیا گیا ۔ علاوہ ازیں وزیراعظم سے سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے ملاقات کی جس میں مبینہ دھاندلی سے متعلق پارلیمانی کمیٹی کے قیام ، نئی قانون سازی اور اسمبلی کے قواعدو ضوابط پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ اسد قیصر نے وزیراعظم کو بتایا کہ کمیٹی میں حکومت اور اپوزیشن کو برابر نمائندگی دی ہے جیسے ہی اپوزیشن کے نام ملیں گے کمیٹی کا اعلان کردونگا ۔سپیکر نے وزیر اعظم کو قومی اسمبلی میں فواد چودھری کی تقریر سے متعلق بھی آگاہ کیا اور تجویز دی کہ ایوان کو بہتر چلانے کے لئے اپوزیشن کو ساتھ لے کر چلنا ضروری ہے ، ہنگامہ آرائی سے ماحول خراب ہوگا۔

وزیراعظم نے کہا ہمیں عوام کی فلاح و بہبود کے لئے کام کرنا ہے اور عوام نے بھی ہمیں اسی چیز کا مینڈیٹ دیا ہے ۔ایوان میں ایسی قانون سازی ہونی چاہئے جس سے عام آدمی کو فائدہ پہنچے ۔ دریں اثنا پشاور میں وزیر اعظم کی زیر صدارت کے پی کے کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں خیبر پختونخوا اور فاٹا میں بیک وقت بلدیاتی انتخابات کرانے کا فیصلہ کیا گیا۔ قبائلی اضلاع میں انصاف کی فراہمی کیلئے فوری اصلاحات اورقلعہ بالا حصار کو عوام کیلئے کھولنے کا فیصلہ کیا گیا ۔ وزیر اعظم کی زیر صدارت فاٹا ٹاسک فورس کا بھی اجلاس ہوا۔اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا فاٹاکے عوام کوبرابری کے حقوق حاصل ہیں۔

فاٹاکے عوام کی ترقی کیلئے ہرممکن اقدامات کئے جائینگے ۔فاٹاکی فلاح وبہبود کیلئے تمام اداروں کومل کرکام کرنے کی ضرورت ہے ۔اٹامیں انتظامی،قانونی،بلدیاتی اورترقیاتی انضمام کیلئے کام کی ضرورت ہے ۔ وزیر اعظم نے ملک بھر میں پٹرول پمپس پر عوام کیلئے ناکافی سہولیات کانوٹس لے لیا جس کے بعد اوگرا نے تمام آئل مارکیٹنگ کمپنیوں کو ہدایت کی ہے کہ پٹرول پمپس پر صفائی کا بندوبست کیا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں