چینی صدرکا مسلح افواج کو کسی بھی ہنگامی جنگ کے لیے تیار رہنے کا حکم

چین کے صدر ژی جن پنگ نے مسلح افواج پر زور دیا ہے کہ وہ کسی بھی ہنگامی جنگ کے لیے خود کو تیار رکھیں۔

چینی صدر نے جنوبی علاقے کی ملٹری کمانڈ کو جنوبی تائیوان سے متصل سمندر کی نگرانی سخت کرنے، موجودہ صورت حال کو برقرار رکھنے،اپنی دفاعی پوزیشن مضبوط کرنے اور کسی بھی ہنگامی فوجی کارروائی کے لیے تیار رہنے کا حکم دیا۔

چینی صدر نے یہ ہدایات کونفڈونگ کے علاقے کے غیراعلانیہ دورے کے موقع پر فوجی قیادت سے ملاقات کے دوران دیں۔

صدر پنگ کا کہنا تھا کہ جنوبی ریجن کی ذمہ دار فوج کو حالیہ عرصے میں‌بھاری ذمہ داری اٹھانا پڑی ہے۔ “CCTV ” کے مطابق صدر نے فوج کو ہدایت کی کہ وہ کسی بھی ہنگامی حالت کے لیے خود کو تیار رکھے۔

انہوں‌نے کہا کہ ہمیں جنگی صلاحیت کو بہتر بنانے کے لیے تیزی کے ساتھ اور زیادہ سے زیادہ مشقیں کرنا ہوں گی۔ جنگ کے لیے تیاری اور فوج کی صلاحیت میں اضافہ ہماری اہم ترین ضرورت ہے۔

چینی ذرائع ابلاغ کے مطابق صدر ژی جن پنگ نے فوجی قیادت سے تفصیلی خطاب کیا مگر اس کی تفصیلات جاری نہیں کی گئیں۔

مبصرین کا خیال ہے کہ چین فوج کے مورال کو بہتر بنانا چاہتے ہیں، تاہم اس کے ساتھ ساتھ وہ جنوبی چینی سمندری حدود کے تحفظ کے لیے بھی فوج کو تیار رہنے اور کسی بھی ہنگامی حالت سے نمٹنے کے قابل دیکھنا چاہتےہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں