امریکی فوج اپنا ساز وسامان جنوبی سرحد کی جانب منتقل کر رہی ہے: جیمز میٹس

امریکی وزیر دفاع جیمز میٹس نے کہا ہے کہ فوج اپنا سازوسامان اور آلاتِ حرب جنوبی سرحد کی جانب منتقل کررہی ہے اور وہاں فوجیوں کو تعینات کیا جائے گا۔

جیمز میٹس نے اتوار کو اپنے ساتھ سفر کرنے والے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سرحد پر فوج کی تعیناتی کی تفصیل ابھی طے کی جارہی ہے اور یہ رات تک انھیں مل جانی چاہیے۔ اس سے یہ پتا چل جائے گا کہ کل کتنے فوجی تعینات کیے جائیں گے۔

امریکی وزیر دفاع نے جب یہ بیان جاری کیا ہے ،عین اسی وقت وسطی امریکیوں کا ایک پیدل قافلہ میکسیکو کے راستے سے امریکا کی جانب آہستہ آہستہ گامزن تھا۔

امریکی فوج کے اضافی دستے میکسیکو کے ساتھ سرحد پر گشت پر مامور محافظوں کو فضائی نگرانی ، گاڑیوں اور آلات کی صورت میں لاجسٹیکل اسپورٹ مہیا کریں گے۔امریکا کی نیشنل گارڈ فورسز کے قریباً دو ہزار فوجی پہلے ہی وہاں تعینات ہیں۔اس لیے ابھی یہ واضح نہیں کہ وہاں نئے بھیجے جانے والے فوجی کیا خدمات انجام دیں گے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے گذشتہ ہفتے جنوبی میکسیکو کی جانب آنے والے پیدل کارواں کی جانب توجہ مبذول کرنے کی ضرورت پر زور دیا تھا لیکن یہ قافلہ ابھی تک امریکی سرزمین سے سیکڑوں میل دور ہے۔

امریکی ریاستیں نیشنل گارڈ کو سرحد پر سکیورٹی کو برقرار رکھنے کے لیے استعمال کرتی ہیں لیکن فوجیوں کو شاذ ہی امریکا کی سرحدوں یا ملک کے کسی علاقے میں تعینات کیا گیا ہے ۔ البتہ ہنگامی حالات ، کسی سمندری طوفان وغیرہ سے پیدا ہونے والی صورت حال میں انھیں امدادی سرگرمیوں کے لیے طلب کیا جاتا رہا ہے۔ صدر ٹرمپ نے گذشتہ ہفتے ملک کی سرحدوں کے تحفظ کے لیے فوج کو تعینات کرنے کا اعلان کیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں