نیتن یاہو ذاتی طور پر “حماس” کو رقوم فراہم کر رہے ہیں: محمود عباس

فلسطینی صدر محمود عباس نے اسرائیل اور حماس تنظیم کو فلسطینی اراضی میں امن و امان کے بگاڑ کا ذمے دار ٹھہرایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بنیامین نیتن یاہو ذاتی طور پر حماس کو مالی رقوم منتقل کرتے ہیں جن سے وہ ہتھیار خریدتی ہے جب کہ ان ہتھیاروں کے استعمال کی قیمت فلسطینیوں کو ادا کرنا پڑتی ہے۔

محمود عباس نے حماس تنظیم اور اسرائیل کو ایک ہی خانے میں رکھتے ہوئے یہ باور کرایا کہ دونوں کا مقصد فلسطینی اتھارٹی کو سبوتاژ کرنا اور مسئلہ فلسطین کے ایسے حل مسلط کرنا ہے جو صرف حماس اور اسرائیل کی خواہشات کے مطابق ہوں۔

تنظیم آزادی فلسطین PLO کی قیادت سے خطاب میں فلسطینی صدر نے کہا کہ حماس نے پی ایل او اور فلسطینی اتھارٹی کے ساتھ معرکہ آرائی کو اسرائیلی پردے میں غزہ پٹی سے مغربی کنارے منتقل کر دیا۔

دوسری جانب حماس تنظیم نے فلسطینی قانون ساز کونسل (پارلیمنٹ) کے تحلیل کیے جانے سے متعلق آئینی عدالت کے فیصلے کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ “اس فیصلے کی کوئی آئینی اور قانونی حیثیت نہیں ہے اور یہ ایک سیاسی فیصلہ ہے جس سے حقیقت تبدیل نہیں ہو گی”۔

اس سے قبل فلسطینی صدر محمود عباس نے ہفتے کے روز اعلان کیا تھا کہ آئینی عدالت نے قانون ساز کونسل (پارلیمنٹ) کی تحلیل کا فیصلہ جاری کیا ہے اور ساتھ ہی چھ ماہ کے اندر قانون ساز کونسل کے انتخابات کا مطالبہ بھی کیا ہے۔

اشتہار


اپنا تبصرہ بھیجیں