جس کے پاس پیسے ہوں وہ حج کے لیے جائے گا، وفاقی وزیر مذہبی امور

پشاور: وفاقی وزیر برائے مذہبی امور نورالحق قادری کا کہنا ہے کہ صاحب استطاعت لوگ ہی حج کرتے ہیں اور جس کے پاس پیسے ہوں وہ حج کے لیے جائے گا۔

پشاور میں تقریب میں شرکت کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے وفاقی وزیر برائے مذہبی امور نے کہا کہ مدینہ کی ریاست ایک فلاحی ریاست ہوتی ہے جس کا مقصد عوام کو خوشحالی دینا ہے، وزارت مذہبی امور نے حج پر سبسڈی برقرار رکھنے کی تجویز دی تھی لیکن وزیراعظم اور کابینہ نے اس تجویز کو مسترد کردیا۔

نورالحق قادری نے مزید کہا کہ حکومت معاشی حالت میں بہتری کے لئے اقدامات اٹھارہی ہے، حج ہرسال مہنگا ہوتا ہے، صاحب استطاعت لوگ ہی حج کرتے ہیں، جس کے پاس پیسے ہوں وہ حج کے لیے جائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ حج کی سبسڈی سے غریب اور امیر طبقہ دونوں مستفید ہورہا تھا، حج پر دی جانے والی سبسڈی مفاد عامہ کے دیگر کاموں کے لیے مختص کریں گے۔

وفاقی وزیر برائے مذہبی امور نے کہا کہ گزشتہ روز کابینہ اجلاس کے دوران فون آنے پر باہر گیا تھا لیکن اختلافات کا تاثر غلط ہے، آج سینیٹ اس لیے نہیں گیا کیونکہ میں اس تقریب میں شریک تھا، حکومت پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں مزید کمی لائے گی۔

اشتہار


اپنا تبصرہ بھیجیں