لیبیا میں جاری خونریزی کا ذمہ دار یورپ ہے: پوٹن

روم: روسی صدر ولادی میر پوٹن کا کہنا ہے کہ لیبیا میں جاری خونریزی کا ذمہ دار یورپ ہے.

روسی صدر نے اپنے دورہ اٹلی کے دوران میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ آپ جانتے ہیں کہ لیبیا کو تباہ کرنے کا فیصلہ یورپی یونین نے کیا تھا. یورپی طیاروں نے لیبیا میں وحشیانہ بمباری کی اور مسلح گروہوں کو مالی امداد دی جس کے نتیجہ میں ہزاروں افراد ہلاک ہوئے اور لیبیا اب تک خانہ جنگی کا شکار ہے.

پوٹن کا مزید کہنا تھا کہ میں نہیں سمجھتا لیبا میں جاری تنازع کو حل کراوانے میں روس کے کردار کی ضرورت ہے لیکن ہمیں اس بات کو سمجھنا ہوگا کہ لیبیا کی خانہ جنگی کس نے شروع کروائی.

خیال رہے کہ 2011 میں نیٹو کی حمایت یافتہ تحریک کے نتیجے میں معمر قذافی کی آمر حکومت کا تختہ الٹنے اور ان کے قتل کے بعد اقتدار کی خاطرجاری خونی جدوجہد کے باعث اب تک ایک لاکھ سے زائد افراد ملک سے فرار ہونے پر مجبور ہوئے ہیں۔

اس کے علاوہ دو روز قبل لیبیا کے دارالحکومت طرابلس کے علاقے میں غیر قانونی طور پر یورپ جانے والے تارکین وطن کے حراستی کیمپ پر فضائی حملے میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد 53 ہوگئی۔

انٹرنیشنل آرگنائزیشن فار مائیگریشن کی جینیوا میں مقیم ترجمان نے کہا کہ فضائی حملوں میں ہلاک تارکین وطن میں 6 بچے بھی شامل تھے۔

اشتہار



اشتہار


اپنا تبصرہ بھیجیں