ایتھوپیا‌ نے ایک دن میں 20 کروڑ سے زیادہ درخت لگا کرعالمی ریکارڈ قائم کر دیا

افریقی ملک ایتھوپیا کے حکام نے دعوی کیا ہے کہ انھوں نے ایک دن میں 20 کروڑ سے زیادہ درخت لگا کر ایک نیا عالمی ریکارڈ قائم کر دیا ہے۔

شجرکاری کے اس منصوبے کی قیادت ایتھوپیا کے وزیراعظم ایبی احمد کر رہے ہیں۔ اس منصوبے کا مقصد جنگل کی کٹائی، موسمیاتی تبدیلی اور قحط جیسے مسائل کا مقابلہ کرنا ہے۔

گذشتہ کچھ عرصے کے دوران موسمیاتی تبدیلی کی بدولت ایتھوپیا میں قحط آنے کا خدشہ بڑھ گیا ہے۔

منصوبے کی تکمیل کے لیے کچھ سرکاری دفاتر بھی بند رکھے گئے ہیں تاکہ سرکاری ملازمین اس مشق میں حصہ لے سکیں۔

اقوامِ متحدہ کے مطابق بیسویں صدی کے اوائِل میں ایتھوپیا کے جنگل ملک کے رقبے کا 35 فیصد حصہ تھے۔ لیکن سنہ 2000 کے بعد یہاں کے جنگل صرف چار فیصد تک رہ گیے۔

وزیراعظم ایبی احمد نے شجرکاری کے منصوبے کی بنیاد اپنے ’گرین لیگیسی انیشی ایٹو‘ کے تحت رکھی ہے۔ اس منصوبے سے ملک بھر میں 1000 مقامات پر درخت لگائے جا رہے ہیں۔

ایتھوپیا کے وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی گیتاہن مکوریا نے ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا کہ اب تک 22 کروڑ سے زیادہ درخت لگائے جا چکے ہیں۔

شجرکاری کے منصوبے کا اصل ہدف چار ارب درخت لگانا ہے۔

سرکاری ٹی وی چینل پر اس منصوبے کی تشہیر کے لیے ویڈیوز چلائی جارہی ہیں جن میں لوگوں کو درخت لگانے اور ان کی حفاظت کرنے کا کہا جا رہا ہے۔

ایک دن میں سب سے زیادہ درخت لگانے کا موجودہ ریکارڈ انڈیا کے پاس ہے۔ سنہ 2016 کے دوران انڈیا میں ایک دن میں آٹھ لاکھ رضاکاروں نے پانچ کروڑ درخت لگائے تھے۔

وزیراعظم ایبی احمد کے ناقدین سمجھتے ہیں کہ وہ اس مہم کے ذریعے لوگوں کا دھیان اپنی حکومت کو درپیش مسائل سے ہٹانے کے لیے استعمال کر رہے ہیں۔

ان کے مطابق ایتھوپیا نسلی تنازعات کا شکار ہے جس میں تقریباً 25 لاکھ لوگوں کو زبر دستی بے گھر کیا گیا۔

یاد رہے کہ پاکستان نے بھی موسمیاتی تبدیلی کا مقابلہ کرنے کے لیے 10 ارب درختوں کی شجرکاری مہم کا آغاز کر رکھا ہے جس کا افتتاح وزیر اعظم عمران خان نے صوبہ خیبر پختونخوا میں ایک پودا لگا کر کیا تھا۔

اشتہار


اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں