میانمار حکومت روہنگیا پناہ گزینوں کی واپسی کیلیے اقدامات کرے، اقوام متحدہ

بنکاک: اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل نے روہنگیا پناہ گزینوں کی حالت زار پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے میانمار حکومت سے مہاجرین کی آباد کاری کے لیے ٹھوس اقدامات کا مطالبہ کیا ہے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوٹریز نے مشرقی ایشیائی اقوام کی تنظیم ’آسیان‘ کے رہنماؤں سے ملاقات میں بنگلا دیش میں مقیم میانمار کے لاکھوں روہنگیا مہاجرین کے بنیادی حقوق سے محرومی اور نہایت گفتہ بہ حالت پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔

تھائی لینڈ میں آسیان تنظیم کا 35 واں اجلاس آج سے شروع ہوا جس میں رکن ممالک کے درمیان باہمی تعاون اور سیکیورٹی سے جڑے مسائل پر تبادلہ خیال ہوا۔ سیکریٹری جنرل اقوام متحدہ انتونیو گوٹیرز نے آسیان کے چند رہنماؤں سے ملاقات میں کہا کہ میانمار بھی آسیان تنظیم کا رکن ہے اس لیے رکن ممالک میانمار حکومت پر دباؤ ڈالیں۔

رہنماؤں سے ملاقات میں اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل نے میانمار کی حکومت پر زور دیا کہ روہنگیا مہاجرین کی بنگلادیش کے پناہ گزین کے کیمپوں سے اپنے گھروں کو واپسی کے ٹھوس اور واضح اقدامات کرے اور مسلمان اقلیت کی جانوں اور املاک کی حفاظت کو یقینی بنائے۔

واضح رہے کہ میانمار میں مسلم کش فسادات کے نتیجے میں لاکھوں روہنگیا مسلمان بنگلادیش کے کیمپوں میں پناہ لینے پر مجبور ہوگئے تھے تاہم دو برس گزرنے کے باوجود تاحال پناہ گزینوں کے اپنے گھروں کی واپسی ممکن نہیں ہوسکی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں