مشرف نے کرسی بچانے کے لیے زرداری کو این آر او دیا ، وزیراعظم

میانوالی: وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ تبدیلی اس لیے نہیں آتی کیونکہ ہرادارے میں معافیا لوٹنے کے لیے بیٹھ جاتے ہیں جب کہ کرسی بچانے نہیں تبدیلی لانے آیا ہوں۔

میانوالی میں وزیراعظم عمران خان نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ تبدیلی اس لیے نہیں آتی کیونکہ ہرادارے میں معافیا لوٹنے کے لیے بیٹھ جاتے ہیں، کرسی بچانے نہیں تبدیلی لانے آیا ہوں، ڈاکوؤں کا مقابلہ کرکے دکھاؤں گا، ڈیل کی تو ملک سے سب سے بڑی غداری ہوگی۔

وزیراعظم نے کہا کہ کنٹینرپرجوبے روزگار سیاست دان آئے تھے وہ پاکستانی معیشیت کی بہتری کے بعد خوفزدہ ہوگئے تھے۔ جو انہوں نے ملک کے ساتھ کیا انہوں نے آگے جاکرپھنسنا ہی ہے جب کہ فضل الرحمان کے ہوتے ہوئے یہودیوں کی کیا ضرورت ہے۔
وزیراعظم نے کہا کہ جب نوازشریف کو لندن روانگی کے لیے جہازپرچڑھتے دیکھا توحیران رہ گیا کہ یہ اتنی بیماریوں کے باوجود بھی یہ مریض ایک دم کیسے ٹھیک ہوگیا۔

وزیراعظم نے کہا کہ جب 2018 کے انتخابات کے بعد پاکستان ملا تومسائل بہت تھے، ہماری حکومت کوہرشعبے میں تاریخی خسارہ ملا، ہم امپورٹ زیادہ کررہے تھے اورایکسپورٹ کم کررہے تھے جس کے باعث ہمارے روپے کی قدرگرتی گئی تاہم پچھلے 4 ماہ میں ہمارا خسارہ کم ہوا جس کے باعث روپے کی قدرمیں اضافہ ہوا، ہمارا راستہ اب ٹھیک ہوگیا۔

وزیراعظم نے مزید کہا کہ جب 23 سال پہلے میانوالی سے سیاست شروع کی تواحساس ہوا تھا کہ انسان کو سب سے زیادہ مشکل تب ہوتی ہے جب وہ بیمارہو، علاج کے لیے اُس وقت لوگوں کو دورجانا ہوتا تھا لیکن اب میانوالی کے لوگوں کی مشکال ختم ہوں گی اور یہ شروعات ہے۔ وزیراعظم نے کہا کہ ہم میانوالی میں سب سے پہلے صحت کے لیے اسپتال، پانی کا مسئلہ اوربچوں کے لیے اعلی تعلیم کے لیے میانوالی یونیورسٹی بنائیں گے کیونکہ قومیں تعلیم کی وجہ سے ترقی کرتی ہیں، جتنی ملک میں اعلی تعلیم کے سینٹرزہوں گے اتنا ملک ترقی کرے گا جب کہ اسپتال کے قیام کے بعد یہاں کو لوگوں کو اسلام آباد روالپنڈی نہیں جانا پڑے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں