حکومت کی لاپتہ کرنل ریٹائرڈ انعام الرحیم کی گرفتاری کی تصدیق

راولپنڈی: حکومت نے کئی روز سے لاپتہ کرنل ریٹائرڈ انعام الرحیم کی گرفتاری کی تصدیق کردی۔

لاہور ہائی کورٹ کے راولپنڈی بینچ میں لاپتہ افراد کے وکیل کرنل ریٹائرڈ انعام الرحیم کی بازیابی کی درخواست کی سماعت ہوئی۔ وفاق کے وکیل نے عدالت میں پیش ہوکر انعام الرحیم کی گرفتاری کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ انعام الرحیم ہمارے پاس ہیں، ان کے خلاف انکوائری جاری ہے۔

کرنل ریٹائرڈ انعام الرحیم کے اہل خانہ کے وکیل نے عدالت سے کہا کہ ان کی گرفتاری کی وجہ اور ان پر عائد الزامات بتائے جائیں۔ ہائی کورٹ کے جسٹس مرزا وقاص رؤف نے ڈپٹی اٹارنی جنرل کو نوٹس جاری کرکے کل طلب کرلیا۔

مغوی کے بیٹے نے پولیس کو بیان دیتے ہوئے کہا کہ ان کے گھر 17 دسمبر کی رات کو رات 12:30 پر 8 نامعلوم افراد جو کالے کپڑوں میں مبلوس تھے گھر میں گھس کر گن پوائنٹ پر میرے والد کو ان کے کمرے سے اغواء کیا اور ساتھ لے گئے.

واضح‌رہے کہ کرنل ریٹائرڈ انعام الرحیم نے جنرل کیانی کی ایکسٹنشن کے خلاف درخواست دائر کی تھی جس کے بعد ان کو ڈندوں سے تشدد کا نشانہ بھی بنایا گیا تھا، اُس وقت کرنل ریٹائرڈ انعام الرحیم کا کہنا تھا کہ انہیں درخواست واپس لینے کے لیے تشدد کا نشانہ بنایا گیا.

موجودہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی ایکسٹنشن کے خلاف اسلام آباد ہائی کورٹ میںدرخواست بھی کرنل ریٹائرڈ انعام الرحیم نے دائر کی تھی.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں