پوپ نے خاتون کا ہاتھ جھٹکنے پر معافی مانگ لی

ویٹی کن سٹی: مسیحی پیشوا پوپ فرانسس نے سال نو کی ایک تقریب کے دوران خاتون کا ہاتھ جھٹکنے پر معافی مانگ لی۔

واضح رہے کہ نئے سال کے آغاز کے موقع پر پوپ فرانسس مسیحی برادری کے مقدس شہر ویٹی کن سٹی کے سینٹ پیٹرز اسکوائر میں زائرین اور عقیدت مندوں کو مبارکباد دیتے ہوئے مصافحہ کر رہے تھے تو ایک خاتون نے ان کا ہاتھ مضبوطی سے تھام لیا اور اپنی طرف کھینچنے کی کوشش کی۔

پوپ فرانسس کو خاتون کی یہ حرکت شدید ناگوار گزری اور انہوں نے خاتون کی گرفت سے اپنا ہاتھ چھڑانے کے لیے ان کے ہاتھ پر ایک تھپڑ رسید کردیا اور برہمی کا بھی اظہار کیا۔

پوپ کی جانب سے خاتون کا ہاتھ جھٹکنے کی ویڈیو سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر وائرل ہوئی جس کے بعد انہوں نے ذاتی حیثیت میں معافی مانگ لی۔

ان کا کہنا تھا کہ ‘کئی مرتبہ ہمارے صبر کا پیمانہ لبریز ہوجاتا ہے’۔

کیتھولک چرچ کے سربراہ کا کہنا تھا کہ ‘ایسا میرے ساتھ بھی ہوتا ہے، میں گزشتہ روز ایک غلط مثال قائم کرنے پر معافی مانگتا ہوں’۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ پوپ فرانسس نے واقعے سے قبل بچوں سے مصافحہ بھی کیا تھا اور وہ واپس جانے لگے تھے کہ خاتون نے ان کا ہاتھ پکڑلیا اور انہیں اپنی طرف کھینچا۔

83 سالہ پوپ نے ان کے ہاتھ پر 2 مرتبہ تھپڑ مارا اور خود کو بچانے کی کوشش کی جس کے بعد سیکیورٹی گارڈز نے فوری مداخلت کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں