ملتان سلطان نے سنسنی خیز مقابلے کے بعد پشاور زلمی کو 3 رنز سے شکست

پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) میں ملتان سلطانز نے سنسنی خیز مقابلے کے بعد پشاور زلمی کو 3 رنز سے ہرا دیا۔

کراچی کے نیشنل اسٹیڈیم میں کھیلے گئے پی ایس ایل کے 27ویں میچ پشاور زلمی نے ٹاس جیت کر ملتان سلطانز کو بیٹنگ کی دعوت دی۔

نئی اوپننگ جوڑی روہیل نذیر اور ذیشان اشرف نے اننگز کا آغاز کیا اور پہلی وکٹ کے لیے 32رنز کی ساجھے داری قائم کی، لیگ میں پہلا میچ کھیلنے والے پاکستان انڈر19 ٹیم کے کپتان روہیل 14رنز بنانے کے بعد وکٹوں کے عقب میں کیچ دے بیٹھے۔

اس کے بعد ذیشان کا ساتھ دینے کپتان شان مسعود آئے اور دونوں کھلاڑی اب تک رنز سے زائد کی شراکت قائم کر چکے ہیں، ذیشان اپنی نصف سنچری مکمل کر چکے ہیں۔

اسکور 92 تک پہنچا تو ذیشان 52 رنز بنانے کے بعد پویلین لوٹ گئے لیکن سلطانز کو اصل دھچکا اس وقت لگا جب ایک گیند ہی راحت علی نے ہی اپنی ٹیم کو تیسری کامیابی دلاتے ہوئے معین علی کی قیمتی وکٹ حاصل کر لی۔

روی بوپاری بھی ٹیم کے کام نہ آئے اور صرف پانچ رنز بنانے کے بعد نوجوان عامر کی میچ میں پہلی کی وکٹ بن گئے۔

شان مسعود نے 28 رنز کی اننگز کھیلی لیکن وہ بھی ٹیم کو بیچ منجدھار میں چھوڑ کر پویلین سدھارے۔

اس موقع پر شاہد آفریدی اور خوشدل شاہ کی جوڑی وکٹ پر اکٹھا ہوئی اور دونوں نے مل کر اسکور کو 134تک پہنچا دیا، شاہد آفریدی آؤٹ ہونے والے چھٹے کھلاڑی بنے جو 19رنز بنا سکے۔

آخری اوور میں خوشدل شاہ نے جارحانہ بیٹنگ کرتے ہوئے دو چھکے لگا کر اپنی ٹیم کو 154رنز کے مجموعے تک رسائی دلائی، انہوں نے 30رنز بنائے۔

ملتان سلطانز نے مقررہ 20 اوورز میں 6 وکٹوں کے نقصان پر 154رنز بنائے۔

پشاور زلمی کی جانب سے راحت علی نے تین جبکہ عامر خان، وہاب ریاض اور حسن علی نے ایک، ایک وکٹ حاصل کی۔

پشاور کا 155 رنز کے ہدف کے تعاقب میں آغاز اچھا نہ تھا اور 8 کے مجموعی اسکور پر ہی کامران اکمل 2 اور کپتان وہاب ریاض 3 رنز بنا کر پویلین لوٹ چکے تھے۔

جس کے بعد امام الحق اور عمر امین نے ٹیم کے اسکور کو آگے بڑھایا لیکن 56 کے مجموعی اسکور پر عمر امین بھی ہار مان گئے اور 29 رنز بنا کر معین علی کی گیند پر بولڈ ہوگئے۔

اس کے بعد تجربہ کار شعیب ملک نے امام الحق کا ساتھ دیا اور اسکور کو 126 رنز تک پہنچایا، اس موقع پر 4 چوکوں اور 2 چھکوں کی مدد سے 56 رنز کی شاندار اننگز کھیلنے والے امام الحق کیچ آؤٹ ہوگئے۔

زلمی کو محض 2 رنز کے فرق سے پانچواں نقصان ہوا اور حیدر علی صرف ایک رن بنا کر پویلین لوٹے جبکہ 130 کے مجموعی اسکور پر علی شفیق نے اپنے اوور میں دوسری وکٹ لیتے ہوئے شعیب ملک کی اننگز کا بھی خاتمہ کردیا، انہوں نے 30 رنز بنائے تھے۔

اس کے بعد سلطانز کے باؤلرز کا پلڑا بھاری ہوگیا اور انہوں نے نپی تلی باؤلنگ کرتے ہوئے زلمی کی ہدف تک پہنچنے کی رفتار کو سست کردیا، اس دوران حماد اعظم بھی 7 رنز بنا کر آؤٹ ہوگئے۔

آخری اوور میں پشاور زلمی کو فتح کے لیے 15 رنز درکار تھے جنہیں نچلے نمبر کے بلے بازوں کے لیے اسکور کرنا مشکل تھا، لیکن علی شفیق کی دو نو بالز اور ایک چوکے نے زلمی کے جیت کے امکانات کو پھر روشن کردیا اور میچ سنسنی خیز ہوگیا۔

تاہم پشاور کے کھلاڑی اس موقع کا فائدہ نہ اٹھا سکے اور پوری ٹیم مقررہ اوورز میں 7 وکٹوں کے نقصان پر 151 رنز بنا سکی۔

یوں ملتان سلطانز نے یہ میچ 3 رنز سے اپنے نام کرلیا۔

ملتان سلطانز کے سہیل تنویر نے 3، علی شفیق نے 2 جبکہ محمد عرفان اور معین علی نے ایک، ایک وکٹ حاصل کی۔

شاندار بلے بازی پر ملتان کے ذیشان اشرف کو میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔

اس سے قبل پشاور زلمی کے کپتان وہاب ریاض نے بتایا کہ ان کی ٹیم میں کوئی بھی غیرملکی کھلاڑی شامل نہیں کیونکہ کورونا وائرس کے خطرے کے سبب ان کے تمام غیرملکی کھلاڑی وطن واپس لوٹ گئے ہیں۔

ملتان سلطانز نے بھی اپنی ٹیم میں متعدد تبدیلیاں کی ہیں اور انہیں بھی وطن واپس لوٹ جانے والے کھلاڑیوں جیمز ونس اور رلی روسو کی خدمات میسر نہیں۔

رواں سال دونوں ٹیموں کے درمیان کھیلے گئے پہلے میچ میں ملتان سلطانز نے پشاور زلمی کو شکست دی تھی۔

یاد رہے کہ کورونا وائرس کے خطرے کے پیش نظر نیشنل اسٹیڈیم میں شائقین کو داخلے کی اجازت نہیں تھی اور خالی اسٹیڈیم میں میچ کھیلا گیا۔

وائرس کے خطرے کے سبب پشاور زلمی کے تمام غیر ملکی کھلاڑی وطن واپس لوٹ گئے ہیں جس میں لیام لیونگسٹن، لیام ڈاسن، ٹام بینٹن، کارلوس بریتھ ویٹ، لوئس گریگوری اور کوچ جیمز فوسٹر بھی شامل ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں