ایئربس کے ماہرین کا تحقیقات کے لیے طیارہ حادثے کے مقام کا دورہ

ایئربس کے ماہرین نے کراچی میں عید سے چند روز قبل پیش آنے والے طیارہ حادثے کی تحقیقات کا آغاز کردیا۔

عید سے محض دو روز قبل 22 مئی کو پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائن (پی آئی اے) کا جہاز ‘اے 320’ کراچی کے علاقے ماڈل کالونی کی سوسائٹی جناح گارڈن کی ایک گلی میں گر کر تباہ ہوگیا تھا، جس کے نتیجے میں عملے کے 8 ارکان سمیت 97 افراد لقمہ اجل بن گئے تھے۔

ابتدائی رپورٹس میں یہ بات سامنے آئی تھی کہ طیارہ بظاہر انجن کی خرابی کی وجہ سے گر کر تباہ ہوا۔

ایوی ایشن انتظامیہ نے کہا کہ انہوں نے ایئربس بنانے والی یورپی کمپنی کی 11 رکنی ٹیم سے اپنی تحقیقات کے ابتدائی نتائج شیئر کیے ہیں۔

ریڈیو پاکستان کی رپورٹ کے مطابق ایئربس کے ماہرین اور انجینیئرز نے پرواز ‘پی کے 8303’ کو پیش آنے والے حادثے کے مقام کا بھی دورہ کیا، جہاں انہیں ایئرکرافٹ ایکسیڈنٹ انویسٹی گیشن بورڈ (اے اے آئی بی) کے حکام نے بریفنگ دی۔

پی آئی اے کے ترجمان عبدالحفیظ کا کہنا تھا کہ ‘ہم ایئربس کے تکنیکی ماہرین کو تمام ممکنہ معاونت فراہم کر رہے ہیں۔’

طیارہ حادثے میں بینک ایگزیکٹو ظفر مسعود سمیت دو مسافر محفوظ رہے تھے۔

لاہور سے کراچی آنے والی پرواز جناح انٹرنیشنل ایئرپورٹ کے قریب لینڈنگ کے کوشش کے دوران گر کر تباہ ہوگئی تھی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں