پاکستان جنوری 2022 سے موبائل فونز کی برآمد شروع کردے گا، مشیر تجارت

اسلام آباد: وزیراعظم کے مشیر برائے تجارت عبدالرزاق داؤد نے کہا ہے کہ پاکستان جنوری 2022 سے موبائل فون برآمد کرنا شروع کردے گا۔

مقامی اخبار کی رپورٹ کے مطابق سینیٹر ذیشان خانزادہ کی سربراہی میں ہونے والے سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے تجارت کے اجلاس میں مشیر تجارت نے کہا کہ ایک چینی کمپنی کراچی میں موبائل فون مینوفیکچرنگ فیکٹری قائم کررہی ہے۔

اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عبدالرزاق داؤد نے کہا کہ پاکستان میں موبائل فونز کی پروڈکشن پہلے ہی شروع ہوچکی ہے اب میں چینیوں کو پاکستان سے موبائل فونز برآمد کرنے کے لیے قائل کرنے کی کوشش کررہا ہوں۔

انہوں نے بتایا کہ چینیوں نے گزشتہ برس موبائل فونز کی پروڈکشن شروع کی تھی اور میں نے انہیں دسمبر 2021 کو ہدف دیا تھا جس پر انہوں نے مجھے جنوری 2022 سے موبائل فون کی برآمد شروع کرنے کی یقین دہانی کروائی تھی۔

پاکستان میں تیار ہونے والے موبائل فون کی برآمد کے لیے کسی ہدف سے متعلق سوال کے جواب میں مشیر تجارت نے کہا کہ یہ برآمدات کے لیے نئی پروڈکٹ ہے اس لیے اس کا کوئی ہدف مقرر نہیں کیا گیا، 2 سال پہلے تک کوئی یہ سوچ بھی نہیں رہا تھا کہ پاکستان موبائل فونز برآمد کرنا شروع کردے گا۔

ملک میں سام سنگ کے آپریشن کے بارے میں عبدالرزاق داؤد نے کہا کہ ابتدا میں سام سنگ نے پاکستان آنے سے انکار کردیا تھا لیکن بعد میں اپنا فیصلہ تبدیل کرتے ہوئے رضامندی ظاہر کی تھی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں